سینٹر آف اسلام سائنس (عقل والوں کے لیے)

کیا قوانین فطرت میں تبدیلی ممکن ہے؟

تحریر: محمد نوح (www.CoislamScience.com)

قوانین فطرت میں تبدیلی انبیاء کرام کے بعد رکی نہیں بلکہ اب بھی جاری ہے اور قیامت تک ممکن ہے بشرطیکہ اللہ کا سچا مومن بندہ سو فیصد اخلاص کے ساتھ اس کے پسندیدہ دین کو غلبہ دینے کیلئے کام کرے ۔ ماضی میں صحابہ اور اولیاء اللہ سے قوانین فطرت میں تبدیلیاں ہوئی ہیں۔ (یہ ایک الگ بحث ہے کہ کوئی اسے قصے کہانیاں سمجھ کر نا مانے )۔ مثلاًاس کائنات میں جاری و ساری قانون میں تبدیلی واقع ہونا اللہ کے حکم سے آج بھی ممکن ہے جیسا کہ آگ میں جاکر جلنے سے سلامت رہنا، چاند کے دو ٹکڑے کردینا ، مردے کو زندہ کردینا، سمندر کو تقسیم کردینا۔

اب اخلاص والے شاذر و نادر ہیں اور شہرت کے دلدادہ بھرے پڑے ہیں جس کا نتیجہ یہ ہے کہ اللہ ایسے مغروروں اور غداروںکی مدد نہیں کرتا اور یہ لوگ صرف زبانی کلامی ہی دین اسلام کی سچائی پر دھواں دھار تقریریں اور الفاظ کے جادو چلانے کی کوششیں کرتے ہیں حالانکہ اس سے انسانوں کے دلوں میں سو فیصد یقین پیدا نہیں کیا جاسکتا۔ خصوصاً اس سائنسی دور میں جہاں ہر طرف جدید ٹیکنالوجی اور زبردست قسم کے چیلنج اور سوالات موجود ہوں۔اسی وجہ سے آج مسلمانوں کی اکثریت نماز ادا نہیں کرتی ۔انکے اپنے یقین (یعنی ایمان)بھی ختم ہوچکے ہیں ۔وہ خالی گلاس کی طرح ہوچکے ہیں جن کے پاس اسلام تو ہے لیکن ایمان کا پانی نہیں رہا۔
اس صورت حال میں پانچ ارب غیر مسلموں سے یہ توقع رکھنا کہ وہ چودہ سو سالوں بعد صرف قرآنی آیات سن کر ہی یقین کرلیںکہ دین اسلام کا خدا سچا ہے میری نظر میں ایک حماقت ہے کیونکہ ان کے سامنے ہم مسلمانوں کے گندے کردار اس قابل نہیں کہ اسلام کی سچائی پر مثال بن سکیں۔
اگر اللہ کی موجودگی ،طاقت، قدرت، دیکھنے، سننے، مدد کرنے اوراس کی ہر شے پر مکمل قدرت پرسو فیصد یقین کامل ہے تو پھر مسلمانوں کے روحانی پیشواغیر مسلم مذہبی پیشوائوں کو عالمی میڈیا کے سامنے آکر آگ میں آنے کو کیوں چیلنج نہیں کرتے تاکہ اللہ کی کامل قدرت کوثابت کرکے دکھا دیا جائے؟
میرے علم میں ایک صاحب ہیں جو دین اسلام کی سچائی کو ثابت کرنے کے لیے لائیو عوام کے سامنے اللہ کے حکم سے مردہ زندہ کروانے کے لیے تیار ہیں مگر شرط یہ ہے کہ اس کے لیے 2 کروڑ پاکستانی روپے کا معاہدہ کیا جائے۔ اگر آپ مالدار مسلمان ہیں اور واقعی دین اسلام کے لیے کچھ کرنا چاہتے ہیں تو مجھ سے رابطہ کرسکتے ہیں۔


Home | About