سینٹر آف اسلام سائنس (عقل والوں کے لیے)

بند حجروں میں اللہ ہو کی ضربیں مارنا کوئی کمال نہیں

تحریر: محمد نوح (www.CoislamScience.com)

بندکمروں میں بیٹھ کر اللہ ہو کی ضربیں مارنا کوئی کمال نہیں اور یہ ولایت کی انتہا نہیں کہ اپنی ذات میں گم ہوکر روحانی دنیاوں کی سیر میں مگن رہا جائے بلکہ مرد مومن کی شان یہ ہے کہ وہ اپنی ہستی سے فنا ہوکر بقا حاصل کرتا ہے اور پھر اس دنیا میں عالم کفرکے خلاف ڈٹ جاتا ہے اور اللہ کے دین کو سر بلند کرنے کیلئے اپنا جان و مال قربان کرتا چلا جاتا ہے یہاں تک کہ مالک حقیقی سے جاملے۔یہ میرے مرشد محمدصلی اللہ علیہ وسلم کے سچے غلاموں کی شان ہے جنہوں نے دین اسلام کی حقیقی روح کو سمجھا اور اسے سربلند کرنے کیلئے تن تنہا ہی میدان میں نکل پڑے اسی لئے صحابہ کرام کے بعد اگر تاریخ اسلام میں کسی نے انقلاب برپا کئے ہیں تو وہ شیخ عبدالقادری جیلانی، خواجہ معین الدین چشتی، سید علی ہجویری جیسے مرد مومن ہیں جو اپنے ہجروں میں ضربیں مارنے کے بجائے ہزاروں لاکھوں کافروں ، مرتدوں،فاسقوں فاجروں کی روحوں میں ایمان کی شمع جلاکر گئے ۔ اور آج دین کے نام پر تماشے کرنے والے کروڑوں کی تعداد میں فرقوں کی تبلیغ میں مصروف ہیں جس کا نتیجہ یہ ہے کہ اسلام تو کیا خاک غالب ہوگا بلکہ الٹا مسلمان بھی دین اسلام سے نفرت کرنے لگے ہیں ۔بمشکل چند فیصد ہی کچھ اثر ہوگا ورنہ معاشرے میں کوئی کمال پیدا نہیں کیا ان دین کے نام پر کروڑوں افراد کی جماعتوں نے ۔


Home | About