سینٹر آف اسلام سائنس (عقل والوں کے لیے)

غیر مسلموں کی سائنسی طاقت اور ہمارے روحانی لوگ

تحریر: محمد نوح (www.CoislamScience.com)

جس طرح غیر مسلم ہر قسم کی ٹیکنالوجی اور وسائل کو استعمال کرکے نئی نسلوں کے ذہن میں شک کشی کررہا ہے اسی طرح ہمارے بابائوں ، پیروں ، بزرگوں، صوفیوں وغیرہ کو چاہئے کہ مرد مومن بنیں اور میدان میں آکر روحانی جنگ کریں۔آپ یہ کشف و کرامات کی کہانیاں سنا سناکر نوجوانوں کے دل و دماغ کے شک دور نہیں کرسکتے بلکہ مزید شک پیدا کرتے ہیں۔
اللہ کی دی ہوئی اس روحانی طاقت کو معاشرے میں جہاں تک رسائی ہے وہاں سامنے لاکر ان شک و شبہات میں بھرے انسانوں کو یقین کی طاقت کا انجکشن لگانا شروع کردیں ورنہ یہ قصے کہانیاں کتابوں میں اچھی لگیں گی۔یہ آپ کے دادا جی کے پرانے دور نہیں ۔آپ کسی دنیا میں جی رہے ہیں؟
آج تجربہ، مشاہدہ اور یقین کروایا جاتا ہے اور غیر مسلم اسی لئے میڈیا و ٹیکنالوجی سے چھاگئے ہیں، وہ آپ کے گھروں میں آپ کے بچوں کے نفوس میں، خیالات میں گھس چکے ہیں اور آپ صرف دعائوں پر تکیہ کلامی لئے بیٹھے فرشتوں کا انتظار کررہے ہیں جبکہ آپ کو اللہ کی دی ہوئی طاقت کو استعمال کرکے کفرو شک میں ڈوبے ملحدوں او ر غیرمسلموں کے سامنے اسلام کی سچائی کا اظہار کرنا چاہیے۔
کیا آپ جانتے نہیں کہ حضرت محمدصلی اللہ علیہ وسلم، صحابہ کرام اور اولیا ء اللہ نے اپنے اپنے دور میںصرف جسمانی طاقت نہیں بلکہ دین اسلام کو غالب کرنے کیلئے روحانی طاقتیں بھی استعمال کرکے دکھائی تھیں؟
آپ سب چھپاکر بیٹھ جاتے ہیں اور شہرت سے بچنے کی بات کرتے ہیں؟تو پھر جنگل میں چلے جائیے۔ پیری فقیری لپیٹ کر بند کردیں اور مخلوق خدا کو بے وقوف بنانے کا دھندا چھوڑ دیں۔
آج مسلمان جسمانی طور پر بھی ذلیل ہے اور آپ اس کو روحانی طور پر بھی ناکام بنانے کے ذمہ دار ہیں۔ایمان صرف اندھے پن کا نام نہیں۔ ایمان اللہ کے موجود ہونے پریقین کی وہ طاقت ہے جس کے بل بوتے پر ایک تنہا مومن ہزاروں جادوگروں اور شیطانی طاقتوں کے سامنے اکیلاہی کافی ہوتا ہے جیسے حضرت موسی علیہ السلام اور فرعون کے جادوگروں کی لڑائی۔
آپ خود بھی غلبہ اسلام کے لئے کام نہیں کررہے اور اپنی نسلوں کو بھی تیار کرنے میں ناکام ہوچکے ہیں۔یہ نئی نسل شیطان کے ہاتھوں میں محض ایک کھلونا ہے جسے وہ مزے سے استعمال کررہا ہے اور آپ ہاتھ پر ہاتھ رکھے سب کچھ قدر ت و مشیت الٰہی پر چھوڑے بیٹھے ہیں اور مظلوم مسلمانوں پر کافروں اورملحدوں کی طرف سے ظلم کے پہاڑ توڑے جارہے ہیں۔
کیا آپ عقل استعمال نہیں کرتے ؟
کیا آپ کا مقصد صرف پیری مریدی کرکے تعداد بڑھانے پر ہے ؟
کیا آپ بزدلوں کی طرح چھپے بیٹھے اللہ ہو کی ضربیں مارتے رہیں گے اور باہر مخلوق اللہ سے یہی کہتی رہے گی کہ اے اللہ کسی عبدالقادر جیلانی، محمد بن قاسم جیسے کو بھیجتا کیوں نہیں؟
ایک طرف مذہب کے نام پر علمائے سو کچھ کرنے سے قاصر ہیں اور دوسری طرف بہت افسوس کی بات ہے آپ جیسے روحانیت کے علمبرداروں کیلئے۔
لہذا شیطان کے ہاتھوں یرغمال دنیا دار طبقے سے یہ امید مت کیجئے کہ وہ اللہ کی زمین پر مخلوق کو سکون اور امن دے سکیں گے۔
اگر آپ اپنی روحانیت سے باہر تبدیلی لانے سے قاصر ہیں تو پھر اپنے وسائل سے میرا ساتھ دیجئے تاکہ اس کام کو سرانجام دینے کے لیے میں قدم اٹھاوںاور انسانوں کو ظالم غیر مسلموں سےنجات دلائی جائے اور دنیا میں مذہب کے نام پر جاری جنگیں رک سکیں۔
آپ کی روحانیت سے چند سو یا ہزار انسانوں کا فائدہ ہوسکتا ہے مگر اللہ اور رسول صلی اللہ علیہ وسلم کے مشن سے ہزاروں نہیں، لاکھوں نہیں ، کروڑوں نہیںبلکہ دنیا کے سات ارب انسانوں کافائدہ ہوگا۔یہ اللہ کا مشن ہے جسے وہ پورا کرکے رہے گا چاہے آپ میں سے کوئی میرا ساتھ دے یا نہیں۔


Home | About