سینٹر آف اسلام سائنس (عقل والوں کے لیے)

قادیانیوں پرلعنت کرنے والے مسلمان

تحریر: محمد نوح (www.CoislamScience.com)

جب میں فیس بک پر قادیانی گروپس میں’قادیانی بہن بھائیوں‘ کے الفاظ سے مخاطب ہوتا تھا تو مجھے سننا پڑتا تھا کہ انہیں بھائی مت کہیں یہ فلاں فلاں ہے۔میر ی نظر میں اس سوچ کے مسلمان اسلام کیلئے کچھ ڈھنگ کا کام نہیں کرسکتے۔ بلکہ اس سے مذہبی نفرت و دہشت گردی پروان چڑھتی ہے جس کا اختتام اپنے سے مخالف مذہب کے انسانوں کو قتل کرنے پر چلا جاتا ہے۔
جو مسلمان قادیانیوں پرلعنت لعنت چلاتے پھرتے ہیں ان میں اکثر مسلمان اپنی زندگی میںقول و فعل کے منافق ہوتے ہیں ۔
میں پوچھتا ہوں کہ جتنے بچے قادیانیوں کے گھروں میں اللہ بھیج رہا ہے ان کا کیا قصور ہے؟
وہ بھی ایک فرقہ پرست مسلمان کی طرح اپنے ماں باپ، استاتذہ اور دیگر احباب سے عقائد سیکھ پر اس پر سچائی کا اندھا یقین کرلے گا۔ اس کے بعد جوان ہوکر جب اسلام کے ٹھیکے داروں سے لعنت و نفرت سنے گا تو خاک اسکی اصلاح ہوگی؟
جس اللہ نے باطل تصوراتی خدواوں کو برا بھلا کہنے سے منع کیا تاکہ غیر مسلم رد عمل میں اللہ کو برا نہ کہیں آپ اس اللہ کے دین کے ٹھیکے دار بن کر کسی قادیانی کو گالیاں دے کراسلام سے مزید متنفر کرتے ہیں؟
وہ بے چارہ جہنم میں جارہا ہے۔اگر آپ کا اپنا بھائی قادیانی ہوجائے تو آپ اس پر لعنت و جوتے برسائوگے یا اسے پیار و محبت سے جہنم سے بچانے کی کوشش کرو گے؟
کسی ڈوبتے کو بچانے کیلئے ہاتھ دیکر قریب لایا جاتا ہے ۔لات مار کر مزید اندر کرکے یہ نعرے مارنا کہ آپ بچانا چاہتے ہیں محض فضول نعرے ہیں۔
وہ بھی حضرت آدم علیہ السلام کی اولاد ہیں۔ ہمارے بہن بھائی ہیں۔حضرت محمدصلی اللہ علیہ وسلم کی امت سے ہیں۔کیا کبھی سوچا ہے کہ گالیوں والے مسلمانوں کی حرکتیں دیکھ کر حضرت محمدصلی اللہ علیہ وسلم کیا سوچتے ہونگے؟
کافروں کو جہنم سے بچانے کیلئے حضرت محمدصلی اللہ علیہ وسلم نے کتنی تکلیفیں برداشت کیں،زخم کھائے ، فاقے کئے ، راتوں کو روئے، امت کا درد رکھتے رہے اور دنیا سے تشریف لے گئے۔ اور آپ ان کے نام پرقادیانیوں کو جوتے مار کر، گالیاں دیکر اسلام میں داخل کرو گے؟ آپ کی سوچ ہے کہ وہ آپ کے ایسے کردار کے بعد آپ کی بات پر توجہ دیں گے۔
اگر اللہ آپ کو قادیانی کے گھر میں پیدا کردیتا تو آج آپ بھی قادیانیت کے دفاع میں مسلمانوں کے خلاف کام کررہے ہوتے۔اس بات کو سمجھنے کیلئے غیر جانبداری اور امت کا درد دل چاہیے مگر جیسے ایک کنویں میں بند مینڈک کی عقل میں یہ بات نہیں آسکتی کہ باہر کی حقیقی دنیا کیسی ہے اسی طرح نفرت سے بھرے دل میں ایک کافر کو جہنم سے بچانے کی بات سمجھ نہیں آسکتی جب تک آپ کااپنا باپ، بھائی، بہن، اولاد یا بیوی کافر نہ ہوجائے۔ تب شاید یہ احساس ہو کہ اصلاح کے نام پر لعن طعن کرنے سے آپ اس کو مزید ہٹ دھرم، ضدی اور لاعلاج بنارہے ہیں۔
اگر آپ کو قادیانیوں کی اصلاح کی بہت فکر ہے تو انہیں www.RightfulReligion.comپر موجود دلیل پہنچائیے کہ مرزا غلام کے پیروکاروں کی لاشیں موت کے بعد سڑگل جاتی ہیں جبکہ محمدصلی اللہ علیہ وسلم کے سچے پیروکاروں کی لاشیں صدیوں اور سالوں سے موت کے بعد خون سمیت تروتازہ رہتی ہیں۔
یہ اس بات پر واضح ثبوت ہے کہ مرزا غلام اور اسکے عقائد باطل ہیں اور اسکے پیروکار وںکے عقائد اللہ کے نزدیک قابل قبول نہیں اسی لئے کسی ایک قادیانی کی لاش بھی تازہ خون سمیت تروتازہ حالت میں موجود نہیں۔وہ اسے غلط ثابت کرنے سے عاجز ہوگا اور کم از کم سوچنے پر مجبور ضرور ہوگا۔


Home | About