سینٹر آف اسلام سائنس (عقل والوں کے لیے)

مسلمان مرد چوڑیاں پہن لیں

تحریر: محمد نوح (www.CoislamScience.com)

بہت شرم کی بات ہے کہ اسلام کے نام پر بڑی بڑی لفاظی کرنے والے ظاہری و باطنی و دنیاوی علوم پر مشتمل مسلمانوں میں گزشتہ نو سال میں کسی ایک مردکی جرات نہیں ہوسکی کہ حضور نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کے مشن کو غالب کرنے کیلئے میرا ساتھ دیتایا آگے کام بڑھانے پر پیشکش کرتا۔
ان چند سالوں میں صرف ایک لڑکی نے فیس بک کے ذریعے خواہش ظاہر کی تھی کہ وہ اس مشن میں شامل ہونا چاہتی ہے مگر اس خواہش کے اظہار کے بعد اس کا کوئی پیغام نہیں ملا۔میرا گمان ہے کہ اس کے رشتہ دار وغیرہ نے شاید الٹے سیدھے خیالات کے ذریعے بدگمان کرکے روک دیا ہوگا۔عوام ہو یا خواص اس میں بہت لوگ شامل ہیں جن تک میرا پیغام پہنچ گیا۔
اخبارات و میڈیا کے لوگ پیغام نشر نہیں کرتے کیونکہ اکثر ان میں سے منافق اور غدار ہیں اور مخلص مسلمانوں تک پیغام پہنچ نہیں پارہا۔ اس کیلئے وسائل اور اشتہارات دینے کی ضرورت ہے کیونکہ اللہ کے دین کیلئے کوئی لاکھوں کا اشتہار ٹی وی پر شائع نہیں کرتا۔(اگر کوئی ایسا ہے تو مجھ سے ضرور رابطہ کرے ۔میں شکرگزار ہو ںگا)۔
مجھے معلوم ہے کہ ابلیس کے سامنے عام انسان تو کیا بڑے بڑے علماء بھی نہیں کھڑے رہ سکتے۔اس لئے صرف اتنا عرض کروںگا کہ میں یہاں جو لکھتا ہوں وہ لائکس یا شئیر کیلئے نہیں بلکہ مسلمانوں کو چیک کرنے کے لیے کہ کون واقعی مخلص ہے اور اللہ اور رسول صلی اللہ علیہ وسلم کی دوستی حاصل کرنا چاہتا ہے۔جس میں سچی طلب اور کچھ کردکھانے کی جرات ہوتی ہے اسی کو دیا جاتا ہے۔خالی بجنے والے ڈبے اپنی جگہ پڑے بجتے رہیں ان سے مجھے کوئی غرض نہیںاور نہ ہر کوئی اس قابل ہے کہ اس کو آخرت کا خزانہ دیا جائے ۔


Home | About